جماعت اسلامی کی موبائل فون سروسز بند کرنے کی مذمت

فائل فوٹو

امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمٰن نے کہا ہے کہ موبائل فون سروسز بند کر دی گئی ہے، بدترین صورتِ حال ہے۔

کراچی میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے حافظ نعیم نے کہا کہ موبائل سروس بند کر کے 25 کروڑ پاکستانیوں کے ساتھ زیادتی کی گئی ہے، وزیرِ داخلہ سے مطالبہ کرتے ہیں کہ فوری طور پر موبائل سروس بحال کی جائے، وزیرِ داخلہ نے فون سروس بند کر کے کون سی دہشت گردی کے خلاف کارروائی کی ہے؟

انہوں نے کہا کہ مختلف جگہ سے خبریں موصول ہو رہی ہیں کہ عملہ رکشے میں سامان لے کر پہنچ رہا ہے، اکثر مقامات پر سامان موجود ہے لیکن عملہ موجود نہیں ہے۔

حافظ نعیم الرحمٰن کا کہنا ہے کہ نجی کمپنیوں، چوکیداروں اور ڈرائیوروں کو پریزائنڈنگ افسران بنا دیا گیا، الیکشن کمیشن بتائے کہ الیکشن کے نام پر کیا مذاق کیا جا رہا ہے۔

امیر جماعت اسلامی کراچی نے کہا کہ کارکنان گھر گھر جائیں اور ہر فرد سے رابطہ کریں اور ووٹ ڈالنے کے لیے لے کر آئیں، غیرجانبدار سروے کے مطابق جماعت اسلامی کراچی میں سب سے آگے ہے، کارکنان حالات پر نظر رکھیں اور ووٹ کا تحفظ کریں۔

ان کا مزید کہنا ہے کہ زبردستی مسلط کرنے والوں کے خلاف بھرپور مزاحمت کی جائے گی، جماعت اسلامی کے بغیر نہ وفاقی اور نہ ہی صوبائی حکومت بنے گی، صاف و شفاف الیکشن ہوں گے تو ہم خیر مقدم کریں گے، اگر دھاندلی ہوگی تو اس کے خلاف بھرپور مزاحمت کی جائے گی، کراچی کے عوام کے پاس واحد آپشن صرف اور صرف جماعت اسلامی ہی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں