خیبرپختونخوا میں ٹیکس نرخ دوسرے صوبوں کے مقابلے بہت کم ہے، مشیر خزانہ

مشیرٍ خزانہ خیبر پختون خوا مزمل اسلم—فائل فوٹو

خیبر پختون خوا کے مشیرِ خزانہ مزمل اسلم نے محکمۂ ایکسائز اینڈ ٹیکسیشنز کی ٹیکسز وصولی پر اظہارِ تشویش کرتے ہوئے کہا ہے کہ خیبر پختون خوا میں ٹیکس نرخ دوسرے صوبوں کے مقابلے بہت کم ہے۔

مشیرِ خزانہ مزمل اسلم کی زیرِ صدارت اجلاس منعقد ہوا۔

اجلاس میں محکمہ ایکسائز اینڈ ٹیکسیشنز، توانائی، ریوینیو اور انفارمیشن حکام نے شرکت کی۔

اجلاس کے دوران مشیرِ خزانہ مزمل اسلم نے ہدایت کی کہ گھروں پر سالانہ میونسپل پراپرٹی ٹیکس بڑے شہروں کے برابر لایا جائے، دو کنال سے بڑے گھر پر میونسپل پراپرٹی ٹیکس صرف 45 ہزار روپے ہے۔

مزمل اسلم کا کہنا تھا کہ بقایاجات کی ریکوری ہر صورت ہونی چاہیے۔

اجلاس کے دوران محکمۂ ایکسائز کے حکام نے بریفنگ کے دوران بتایا کہ 100 ٹی ایم ایز میونسپل پراپرٹی ٹیکس سے مستثنیٰ ہیں، مقامی لوگ گاڑیاں باہر سے رجسٹرڈ کراتے ہیں جن سے ٹوکن ٹیکس کم جمع ہوتے ہیں۔

اس پر مشیرِ خزانہ نے ہدایت کی کہ خیبر پختون خوا سے باہر رجسٹرڈ گاڑیوں پر ٹیکس کی تجاویز لے کر آئیں، صوبے سے باہر رجسٹرڈ گاڑیاں صوبے کا انفرااسٹرکچر استعمال کرتی ہیں۔

مزمل اسلم کے مطابق خیبر پختون خوا میں نان فائلر پر پراپرٹی ٹیکس 23 فیصد بہت زیادہ ہے، پراپرٹی ٹیکس میں صرف 6 فیصد صوبے کو جاتا ہے، 6 فیصد ٹیکس بھی مزید کم کریں گے تاکہ لوگ زمین کے انتقالات شروع کریں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں