پاکستان کے فرانس کے ساتھ دوستانہ اور خوشگوار تعلقات ہیں: وزیراعظم

جمہوریہ فرانس کے سفیر نکولس گیلی نے آج وزیر اعظم سے ملاقات کی۔ وزیر خارجہ سینیٹر محمد اسحاق ڈار اور ایس اے پی ایم طارق فاطمی بھی وزیراعظم کے ہمراہ تھے۔سفیر نے فرانسیسی وزیر اعظم ایچ ای کی طرف سے مبارکبادی خط حوالے کیا۔ گیبریل اتال نے اپنے دوبارہ انتخاب پر وزیر اعظم سے تبادلۂِ خیال کیا۔ وزیراعظم نے تہنیتی پیغام پر فرانسیسی قیادت کا شکریہ ادا کیا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے فرانس کے ساتھ دوستانہ اور خوشگوار تعلقات ہیں اور اگرچہ چند سال قبل یہ تعلقات مشکل دور سے گزرے تھے. لیکن اب دونوں ممالک دوطرفہ تعاون کو مزید مضبوط بنانے کے لیے مل کر کام کر رہے ہیں۔وزیر اعظم نے فرانس کے صدر ایمانوئل میکرون کے ساتھ اپنی قبل ازیں ہونے بات چیت کو یاد دہانی کروائی. خاص طور پر 2022 میں یو این جی اے کے اجلاس کے موقع پر ان کی ملاقاتوں کے ساتھ ساتھ جون 2023 میں موسمیاتی تبدیلی سے متعلق نئے مالیاتی معاہدے پر پیرس کانفرنس کے حاشیے پر۔ صدر کی گرمجوشی اور پاکستان کی حمایت کا اظہار۔ انہوں نے جنوری 2023 میں جنیوا کانفرنس برائے لچکدار پاکستان میں ورچوئل شرکت کے ذریعے صدر میکرون کی گرانقدر شراکت کو بھی سراہا۔وزیراعظم نے صدر میکرون کو جلد از جلد پاکستان کا سرکاری دورہ کرنے کی دعوت کا اعادہ کیا۔انہوں نے دونوں فریقین کی طرف سے باہمی تعاون بالخصوص تجارت اور سرمایہ کاری میں تعاون بڑھانے کی ضرورت پر زور دیا اور فرانسیسی کمپنیوں کو پاکستان میں سرمایہ کاری کی دعوت دی۔ انہوں نے فرانس کی جانب سے اعلیٰ فرانسیسی کمپنیوں کے کارپوریٹ لیڈروں کو جلد پاکستان کے دورے پر لانے کے اقدام کا خیرمقدم کیا۔ وزیراعظم نے یہ بھی بتایا کہ معیشت کا استحکام حکومت کے ایجنڈے میں سرفہرست ہے۔غزہ کی صورتحال بھی زیر بحث آئی اور وزیراعظم نے خطے میں فرانس کی امن کوششوں کو سراہا۔ افغانستان کی صورتحال پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔فرانسیسی سفیر نے وزیر اعظم کا استقبال کرنے پر شکریہ ادا کیا اور انہیں دو طرفہ محاذ پر ہونے والی تازہ پیش رفت سے آگاہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ دوطرفہ تعاون پر بات چیت کے لیے فرانسیسی وفد کی پاکستان آمد متوقع ہے۔ انہوں نے کہا کہ دوطرفہ تعلقات کو مضبوط بنانے کے علاوہ فرانس اقوام متحدہ سمیت کثیرالجہتی فورمز پر پاکستان کے ساتھ مل کر کام کرنے کا خواہشمند ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں