وفاقی کابینہ نے کن اہم اقدامات کی منظوری دی؟

وزیرِ اعظم شہباز شریف– فائل فوٹو

وزیرِ اعظم شہباز شریف نے کہا ہے کہ مہنگائی میں بتدریج کمی ہو رہی ہے جو خوش آئند ہے، آئی ایم ایف پروگرام معیشت کی بحالی کے لیے ناگزیر ہے۔

وزیرِ اعظم کی زیرِ صدارت ہونے والے وفاقی کابینہ کے اجلاس کا اعلامیہ جاری کر دیا گیا جس کے مطابق نیشنل کمیشن برائے اسٹیٹس آف ویمن کے ممبران کی تعیناتی کی منظوری دی گئی، فسکل پالیسی اسٹیٹمنٹ برائے 23-2022ء، ڈیبٹ پالیسی اسٹیٹمنٹ برائے 23-2022ء کابینہ میں پیش کیا گیا، ایئر اینڈ گورنمنٹ پرفارمنس مانیٹرنگ رپورٹ بھی کابینہ اجلاس میں پیش کی گئی۔

وفاقی کابینہ نے رپورٹس مروجہ قوانین کے تحت قومی اسمبلی کے سامنے پیش کرنے کی منظوری دے دی جبکہ سابق چیف آف نیول اسٹاف ایڈمرل محمد امجد خان نیازی کو سعودی حکومت کی جانب سے ’کنگ عبدالعزیز میڈل بیج آف آنرر آف ایکسیلنٹ کلاس ایوارڈ‘ وصول کرنے کی منظوری دی گئی۔

سابق چیف آف نیول اسٹاف ایڈمرل محمد امجد خان نیازی کو حکومت ملائیشیا کی جانب سے ’درجہ کیپہلونان انگاٹن تینترہ‘ وصول کرنے کی اجازت بھی دے دی گئی۔

اعلامیے کے مطابق کابینہ نے نیشنل کمیشن برائے چائلڈ ویلفیئر اینڈ ڈیولپمنٹ، نیشنل چائلڈ پروٹیکشن سینٹر کو ختم کرنے کی منظوری دے دی، کابینہ نے امپلی مینٹیشن آف نیشنل لائن آف ایکشن فار چلڈرن کو ختم کرنے کی بھی منظوری دی۔

اجلاس میں وزیرِ اعظم نے کہا کہ ملکی معیشت استحکام کی طرف گامزن ہے، معاشی اعشاریوں میں بہتری دیکھنے میں آ رہی ہے، غربت اور بے روزگاری کا خاتمہ حکومت کی اولین ترجیح ہے۔

وزیرِ اعظم شہباز شریف نے کہا ک ایف بی آر کی ڈیجیٹائزیشن کے حوالے سے ماہرین کی تعیناتی اسی ماہ ہو جائے گی۔

انہوں نے کہا کہ پی آئی اے کی نج کاری کے حوالے سے ٹائم لائنز پر ہر صورت عمل درآمد ہو گا، ہوائی اڈوں کی آؤٹ سورسنگ کے لیے حکمتِ عملی ترتیب دی جا چکی ہے، کراچی اور لاہور کے ہوائی اڈوں کو بین الاقوامی معیار کی سہولتوں سے آراستہ کریں گے۔

وزیرِ اعظم شہباز شریف نے یہ بھی کہا کہ پاکستان میں مقیم چینی شہریوں کو مکمل سیکیورٹی فراہم کی جائے گی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں